Sports Setup
Every Thing about Sports

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Record-Breaking Performance: Kishan's Explosive Double Century Precedes Kohli's Landmark Ton - Sports Setup
Sports Setup
Every Thing about Sports

Record-Breaking Performance: Kishan’s Explosive Double Century Precedes Kohli’s Landmark Ton

0

In a remarkable display of cricketing prowess, Ishan Kishan stole the spotlight by smashing the fastest double century in the third ODI between Bangladesh and India in Chattogram. This achievement came before Virat Kohli ended his century drought, reaching his 44th ODI ton. Let’s delve into the noteworthy statistics from this high-octane match.

Ishan Kishan’s Sensational Maiden Hundred

Ishan Kishan’s explosive innings of 210 not only secured a resounding win for India but also etched several records in the cricketing annals:

  • Kishan became the first Indian opener to notch a century in ODIs since January 2020, breaking a 36-match dry spell for Indian openers.
  • His scintillating 150 came in just 103 balls, making it the fastest by an Indian, surpassing Virender Sehwag’s record.
  • At the 30th over mark, Kishan’s score of 179 was the second-highest, trailing only Shane Watson’s 185* in 2011.
  • Surpassing Sourav Ganguly’s 183, Kishan claimed the record for the highest score by an Indian left-hander in ODIs.
  • Achieving a double century in just 126 balls, Kishan set the record for the fastest in ODIs, surpassing Sehwag’s mark.

Furthermore, at the age of 24 years and 145 days, Kishan became the youngest double centurion in ODIs, breaking Rohit Sharma’s previous record.

His final score of 210 stands as the highest maiden hundred in ODIs, a remarkable feat that adds to his burgeoning reputation. Kishan’s innings included an astonishing 34 boundaries, comprising 24 fours and 10 sixes, a display of sheer dominance.

Virat Kohli Ends Century Drought

Virat Kohli, after a dry spell of three years, 118 days, and 26 innings, finally notched a century in ODIs. This marked his 72nd century in international cricket, surpassing Ricky Ponting’s tally of 71 international hundreds. Sachin Tendulkar remains the only player with 100 international centuries.

India’s Dominance: Breaching the 400-Mark

Powered by Kishan’s double century and Kohli’s century, India posted a colossal total of 409/8. This marked the sixth instance where India breached the 400-run mark in ODIs, equalling South Africa’s record. Additionally, it was the first time Bangladesh witnessed a 400+ total in an innings.

The second-wicket partnership of 290 runs between Kohli and Kishan ranked as the third-highest for India in ODIs, highlighting their stellar collaboration.

In summary, this electrifying match not only showcased individual brilliance but also solidified India’s prowess in ODIs, leaving a trail of records and milestones.

ریکارڈ توڑ کارکردگی: کشن کی دھماکہ خیز ڈبل سنچری کوہلی کے تاریخی سنچری سے پہلے چٹگرام میں بنگلہ دیش اور بھارت کے درمیان کھیلے گئے تیسرے ون ڈے میں ایشان کشن نے کرکٹ کی مہارت کا شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے تیز ترین ڈبل سنچری بنا کر توجہ حاصل کی۔ یہ کامیابی ویرات کوہلی کی سنچری کی خشک سالی کو ختم کرنے سے پہلے حاصل ہوئی، جس نے اپنا 44 واں ون ڈے سنچری مکمل کیا۔ آئیے اس ہائی آکٹین ​​میچ کے قابل ذکر اعدادوشمار پر غور کریں۔ ایشان کشن کی سنسنی خیز شادی سو ایشان کشن کی 210 کی دھماکہ خیز اننگز نے نہ صرف ہندوستان کے لیے شاندار جیت حاصل کی بلکہ کرکٹ کی تاریخوں میں کئی ریکارڈ بھی بنائے: کشن جنوری 2020 کے بعد ون ڈے میں سنچری بنانے والے پہلے ہندوستانی اوپنر بن گئے، جس نے ہندوستانی اوپنرز کے لیے 36 میچوں کے خشک اسپیل کو توڑا۔ ان کا شاندار 150 صرف 103 گیندوں میں بنا، جس نے اسے وریندر سہواگ کے ریکارڈ کو پیچھے چھوڑتے ہوئے کسی ہندوستانی کی طرف سے تیز ترین بنایا۔ 30 ویں اوور کے نشان پر، کشن کا 179 کا سکور دوسرا سب سے زیادہ تھا، جو 2011 میں صرف شین واٹسن کے 185* رنز سے پیچھے تھا۔ سورو گنگولی کے 183 کو پیچھے چھوڑتے ہوئے، کشن نے ون ڈے میں کسی ہندوستانی بائیں ہاتھ کے کھلاڑی کے ذریعہ سب سے زیادہ اسکور کا ریکارڈ اپنے نام کیا۔ صرف 126 گیندوں میں ڈبل سنچری حاصل کرتے ہوئے، کشن نے سہواگ کے نشان کو پیچھے چھوڑتے ہوئے ون ڈے میں تیز ترین سنچری کا ریکارڈ قائم کیا۔ مزید برآں، 24 سال اور 145 دن کی عمر میں، کشن روہت شرما کا سابقہ ​​ریکارڈ توڑتے ہوئے ون ڈے میں سب سے کم عمر ڈبل سنچری بن گئے۔ ان کا 210 کا آخری اسکور ون ڈے میں سب سے زیادہ پہلی سنچری کے طور پر کھڑا ہے، یہ ایک قابل ذکر کارنامہ ہے جو اس کی بڑھتی ہوئی ساکھ میں اضافہ کرتا ہے۔ کشن کی اننگز میں حیران کن 34 چوکے شامل تھے، جس میں 24 چوکے اور 10 چھکے شامل تھے، جو سراسر غلبہ کا مظاہرہ تھا۔ ویرات کوہلی نے صدی کی خشک سالی ختم کردی ویرات کوہلی نے تین سال، 118 دن اور 26 اننگز کے خشک اسپیل کے بعد آخر کار ون ڈے میں سنچری بنائی۔ یہ بین الاقوامی کرکٹ میں ان کی 72 ویں سنچری ہے، جس نے رکی پونٹنگ کی 71 بین الاقوامی سنچریوں کی تعداد کو پیچھے چھوڑ دیا۔ سچن ٹنڈولکر 100 بین الاقوامی سنچریوں کے ساتھ واحد کھلاڑی ہیں۔ ہندوستان کا غلبہ: 400 کے نشان کی خلاف ورزی کشن کی ڈبل سنچری اور کوہلی کی سنچری کی بدولت ہندوستان نے 409/8 کا زبردست ٹوٹل پوسٹ کیا۔ یہ چھٹا واقعہ ہے جہاں ہندوستان نے ون ڈے میں 400 رنز کا ہندسہ عبور کیا اور جنوبی افریقہ کے ریکارڈ کی برابری کی۔ مزید برآں، یہ پہلا موقع تھا جب بنگلہ دیش نے ایک اننگز میں 400+ کا مجموعہ دیکھا۔ کوہلی اور کشن کے درمیان دوسری وکٹ کی 290 رنز کی شراکت کو ون ڈے میں ہندوستان کے لیے تیسرے سب سے زیادہ شراکت دار قرار دیا گیا، جو ان کے شاندار تعاون کو نمایاں کرتا ہے۔ خلاصہ یہ کہ اس برق رفتار میچ نے نہ صرف انفرادی کمالات کا مظاہرہ کیا بلکہ ون ڈے میں ہندوستان کی صلاحیت کو بھی مستحکم کیا، جس سے ریکارڈز اور سنگ میلوں کی راہیں نکل گئیں۔

Leave a Reply

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Discover more from Sports Setup

Subscribe now to keep reading and get access to the full archive.

Continue reading