Sports Setup
Every Thing about Sports

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Initial Composition of the New Federal Cabinet Under Discussion - Sports Setup
Sports Setup
Every Thing about Sports

Initial Composition of the New Federal Cabinet Under Discussion

0



In the aftermath of the latest general elections, there is ongoing deliberation regarding the formation of the new federal cabinet, which might include up to 25 members in its initial setup.

A significant meeting held by the PML-N’s top figures, Nawaz Sharif and Shehbaz Sharif, focused on evaluating the outcomes of discussions with allied parties and identifying suitable candidates for the cabinet positions, as informed by sources to The Express Tribune on a recent Wednesday.

Shehbaz Sharif, in the meeting, updated Nawaz on the status of alliances and contemplated over the choices for cabinet positions. It is anticipated that the first iteration of the cabinet will feature 25 positions, with the MQM-P expected to be allocated between three to five ministries.

Potential candidates for the cabinet from MQM-P include prominent leaders such as Khalid Maqbool Siddiqui, Farooq Sattar, Mustafa Kamal, Aminul Haque, and Khawaja Izharul Hasan, as per the insights from PML-N.

For ministerial roles, PML-N has identified 15 of its senior members, including notable figures like Ishaq Dar, Ayaz Sadiq, Khawaja Asif, Ahsan Iqbal, Marriyum Aurangzeb, Attaullah Tarar, Shaza Fatima Khawaja, Riazul Haq Juj, Bilal Azhar Kayani, Dr Tariq Fazal Chaudhry, Qamarul Islam Raja, and Rana Tanveer Hussain.

Furthermore, Awn Chaudry of the Istehkam-e-Pakistan Party (IPP) is slated for the role of special assistant to the prime minister, enhancing the coalition’s expertise and representation.

Inline related post44
1 of 3

Previously, PML-N had shared a power-sharing strategy for the forthcoming federal government, indicating that the PML-N’s prime ministerial candidate would lead to PPP securing the presidential and speaker positions if the coalition concurs.

Shehbaz Sharif has emerged as a strong candidate for the prime minister’s role, with support from former allies like PPP, MQM-P, PML-Q, BAP, and IPP. Nawaz Sharif has tactically proposed his brother for the prime ministerial position and his niece, Maryam Nawaz, for the Punjab chief minister role.

A collaborative press conference in Islamabad saw key political figures, including Shehbaz, PPP’s Asif Ali Zardari, MQM-P’s Khalid Maqbool Siddiqui, PML-Q’s Chaudhry Shujaat Hussain, BAP’s Sadiq Sanjrani, and IPP’s Aleem Khan, reaffirming their support for Shehbaz and committing to tackle national issues together within a coalition framework.

While specific details of the power-sharing arrangement are yet to be disclosed, the conference subtly suggested Zardari as a likely candidate for the presidency in the foreseeable future.

نئی وفاقی کابینہ کی ابتدائی تشکیل زیر بحث تازہ ترین عام انتخابات کے بعد نئی وفاقی کابینہ کی تشکیل کے حوالے سے غور و خوض جاری ہے جس کے ابتدائی سیٹ اپ میں 25 ارکان شامل ہو سکتے ہیں۔ مسلم لیگ (ن) کی اعلیٰ شخصیات، نواز شریف اور شہباز شریف کی جانب سے منعقد ہونے والی ایک اہم ملاقات، اتحادی جماعتوں کے ساتھ ہونے والی بات چیت کے نتائج کا جائزہ لینے اور کابینہ کے عہدوں کے لیے موزوں امیدواروں کی نشاندہی پر مرکوز تھی، جیسا کہ حالیہ بدھ کو ایکسپریس ٹریبیون کو ذرائع نے بتایا۔ ملاقات میں شہباز شریف نے نواز کو اتحاد کی صورتحال سے آگاہ کیا اور کابینہ کے عہدوں کے انتخاب پر غور کیا۔ توقع کی جا رہی ہے کہ پہلی بار کابینہ میں 25 عہدے ہوں گے، جس میں ایم کیو ایم پی کو تین سے پانچ وزارتوں کے درمیان تقسیم کیے جانے کی توقع ہے۔ ایم کیو ایم پی کی جانب سے کابینہ کے لیے ممکنہ امیدواروں میں اہم رہنما خالد مقبول صدیقی، فاروق ستار، مصطفیٰ کمال، امین الحق، اور خواجہ اظہار الحسن شامل ہیں، مسلم لیگ (ن) کے بصیرت کے مطابق۔ وزارتی کرداروں کے لیے مسلم لیگ (ن) نے اپنے 15 سینئر اراکین کی نشاندہی کی ہے، جن میں اسحاق ڈار، ایاز صادق، خواجہ آصف، احسن اقبال، مریم اورنگزیب، عطاء اللہ تارڑ، شازہ فاطمہ خواجہ، ریاض الحق جج، بلال اظہر کیانی، ڈاکٹر عبدالرشید جیسی قابل ذکر شخصیات شامل ہیں۔ طارق فضل چوہدری، قمر الاسلام راجہ، رانا تنویر حسین۔ مزید برآں، اتحاد کی مہارت اور نمائندگی میں اضافہ کرتے ہوئے، استحکم پاکستان پارٹی (آئی پی پی) کے عون چوہدری کو وزیر اعظم کے معاون خصوصی کے کردار کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔ اس سے قبل، مسلم لیگ (ن) نے آئندہ وفاقی حکومت کے لیے اقتدار کی تقسیم کی حکمت عملی کا اشتراک کیا تھا، جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ اگر اتحاد اتفاق کرتا ہے تو مسلم لیگ (ن) کا وزارت عظمیٰ کا امیدوار پی پی پی کو صدارتی اور اسپیکر کے عہدوں پر لے جائے گا۔ شہباز شریف وزارت عظمیٰ کے لیے ایک مضبوط امیدوار کے طور پر ابھرے ہیں، جنہیں سابق اتحادیوں جیسے PPP، MQM-P، PML-Q، BAP اور IPP کی حمایت حاصل ہے۔ نواز شریف نے حکمت عملی کے ساتھ اپنے بھائی کو وزارت عظمیٰ کے لیے اور اپنی بھانجی مریم نواز کو پنجاب کی وزارت اعلیٰ کے لیے تجویز کیا ہے۔ اسلام آباد میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں شہباز، پی پی پی کے آصف علی زرداری، ایم کیو ایم پی کے خالد مقبول صدیقی، مسلم لیگ (ق) کے چوہدری شجاعت حسین، بی اے پی کے صادق سنجرانی، اور آئی پی پی کے علیم خان سمیت اہم سیاسی شخصیات نے شہباز کی حمایت اور عزم کا اعادہ کیا۔ قومی مسائل کو اتحادی فریم ورک کے اندر مل کر حل کریں۔ اگرچہ اقتدار کی تقسیم کے انتظامات کی مخصوص تفصیلات کا ابھی انکشاف ہونا باقی ہے، کانفرنس نے زرداری کو مستقبل قریب میں صدارت کے لیے ممکنہ امیدوار کے طور پر تجویز کیا۔

Leave a Reply

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Discover more from Sports Setup

Subscribe now to keep reading and get access to the full archive.

Continue reading