Sports Setup
Every Thing about Sports

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Global Markets Reassessing After Fed Pivot Rally - Sports Setup
Sports Setup
Every Thing about Sports

Global Markets Reassessing After Fed Pivot Rally

0

The aftermath of the Fed pivot rally is witnessing a recalibration in several global markets, with bond yields on the rise. According to Ned Davis Research (NDR), numerous markets have “completely unwound” the gains made during the rally, particularly in the UK, Germany, and Canada, where yields on the 10-year note have surpassed pre-Fed December meeting levels.

Bond Market Realignment

While the stock market has seen skepticism regarding the Fed pivot rally, bond markets are also adjusting their expectations for a March rate cut, as highlighted by NDR. Investors are actively divesting from government bonds, causing yields to increase, indicative of a pullback from the optimism that followed the Fed’s December meeting.

Strategist Joseph Kalish emphasized this shift, stating, “Several markets have completely unwound their Powell pivot rally.” Notably, the 30-year US Treasury yields stand at 4.38%, exceeding the 4.30% level observed before the Fed’s meeting on December 12. The change is attributed to the market’s reassessment of critical US economic indicators, signaling a potentially overheated economy from retail sales to jobless claims and inflation.

Global Sell-Off and Inflation Concerns

Beyond the US, other bond markets are experiencing sell-offs as investors reevaluate their rate cut expectations. In the UK and Canada, higher-than-expected inflation rates have prompted a reassessment of the trajectory of potential rate cuts. German 10-year yields, for instance, now sit at 2.355%, surpassing the 2.23% pre-Fed meeting levels.

The UK 10-year gilt and Canadian 10-year yield have also seen increases, standing at 3.987% and 3.49%, respectively. These adjustments indicate a broader global shift in sentiment as markets respond to evolving economic conditions.

Inline related post44
1 of 3

Divergent Views on Rate Cuts

While the Federal Reserve has hinted at the possibility of three rate cuts in the upcoming year, market expectations had initially priced in as many as six, with the potential for the first cut in March. This optimistic outlook had triggered a surge in stock prices and a historic reversal in the US bond market.

Yields on the 10-year US note, while still lower than pre-Fed December meeting levels, show a nuanced picture. Kalish highlighted that “yields were still significantly lower in the short to intermediate portions of the curve, with 2-year yields down a sharp 34 bp.” This suggests a divergence in expectations across different segments of the yield curve.

In conclusion, the global financial landscape is currently navigating through a period of adjustment as markets reassess their outlook following the Fed pivot rally. The bond market, in particular, is witnessing a realignment of expectations in response to evolving economic data and changing perceptions of future rate cuts.

فیڈ پیوٹ ریلی کے بعد عالمی منڈیوں کا دوبارہ جائزہ فیڈ پیوٹ ریلی کے نتیجے میں بانڈ کی پیداوار میں اضافہ کے ساتھ، کئی عالمی منڈیوں میں بحالی کا مشاہدہ کیا جا رہا ہے۔ Ned Davis Research (NDR) کے مطابق، متعدد مارکیٹوں نے ریلی کے دوران حاصل ہونے والے فوائد کو “مکمل طور پر بے اثر” کر دیا ہے، خاص طور پر برطانیہ، جرمنی اور کینیڈا میں، جہاں 10 سالہ نوٹ پر پیداوار نے Fed دسمبر سے پہلے کی میٹنگ کی سطحوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ بانڈ مارکیٹ ریلائنمنٹ جب کہ اسٹاک مارکیٹ نے فیڈ پیوٹ ریلی کے حوالے سے شکوک و شبہات دیکھے ہیں، بانڈ مارکیٹیں مارچ کی شرح میں کمی کے لیے اپنی توقعات کو بھی ایڈجسٹ کر رہی ہیں، جیسا کہ NDR نے روشنی ڈالی ہے۔ سرمایہ کار فعال طور پر سرکاری بانڈز سے دستبردار ہو رہے ہیں، جس کی وجہ سے پیداوار میں اضافہ ہو رہا ہے، جو کہ Fed کی دسمبر کی میٹنگ کے بعد آنے والی امید سے واپسی کا اشارہ ہے۔ اسٹریٹجسٹ جوزف کالیش نے اس تبدیلی پر زور دیتے ہوئے کہا، “کئی مارکیٹوں نے اپنی پاول پیوٹ ریلی کو مکمل طور پر ختم کر دیا ہے۔” قابل ذکر بات یہ ہے کہ 30 سالہ یو ایس ٹریژری کی پیداوار 4.38 فیصد ہے، جو کہ 12 دسمبر کو Fed کی میٹنگ سے پہلے دیکھی گئی 4.30 فیصد سطح سے زیادہ ہے۔ بے روزگاری کے دعوؤں اور مہنگائی کے لیے۔ گلوبل سیل آف اور افراط زر کے خدشات امریکہ کے علاوہ، دیگر بانڈ مارکیٹس سیل آف کا سامنا کر رہی ہیں کیونکہ سرمایہ کار اپنی شرح میں کمی کی توقعات کا دوبارہ جائزہ لیتے ہیں۔ برطانیہ اور کینیڈا میں، توقع سے زیادہ افراط زر کی شرحوں نے ممکنہ شرح میں کمی کی رفتار کا دوبارہ جائزہ لیا ہے۔ جرمن 10 سالہ پیداوار، مثال کے طور پر، اب 2.355% پر بیٹھی ہے، جو 2.23% پری فیڈ میٹنگ کی سطح کو پیچھے چھوڑتی ہے۔ یوکے 10 سالہ گلٹ اور کینیڈین 10 سالہ پیداوار میں بھی بالترتیب 3.987% اور 3.49% اضافہ دیکھا گیا ہے۔ یہ ایڈجسٹمنٹ جذبات میں وسیع تر عالمی تبدیلی کی نشاندہی کرتی ہیں کیونکہ مارکیٹیں بدلتے ہوئے معاشی حالات کا جواب دیتی ہیں۔ شرح میں کٹوتیوں پر مختلف آراء جبکہ فیڈرل ریزرو نے آئندہ سال میں تین شرحوں میں کمی کے امکان کا اشارہ دیا ہے، مارکیٹ کی توقعات نے ابتدائی طور پر مارچ میں پہلی کٹوتی کے امکانات کے ساتھ قیمت چھ میں رکھی تھی۔ اس پرامید نقطہ نظر نے اسٹاک کی قیمتوں میں اضافے اور امریکی بانڈ مارکیٹ میں تاریخی تبدیلی کو جنم دیا تھا۔ 10 سالہ امریکی نوٹ پر پیداوار، جبکہ ابھی بھی پری فیڈ دسمبر میٹنگ کی سطحوں سے کم ہے، ایک اہم تصویر دکھاتی ہے۔ کالیش نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ “وکر کے مختصر سے درمیانی حصوں میں پیداوار اب بھی نمایاں طور پر کم تھی، جس میں 2 سال کی پیداوار میں 34 bp تیزی سے کمی آئی ہے۔” یہ پیداوار کے منحنی خطوط کے مختلف حصوں میں توقعات میں فرق کی تجویز کرتا ہے۔ آخر میں، عالمی مالیاتی منظر نامہ اس وقت ایڈجسٹمنٹ کی مدت سے گزر رہا ہے کیونکہ مارکیٹیں فیڈ پیوٹ ریلی کے بعد اپنے نقطہ نظر کا دوبارہ جائزہ لے رہی ہیں۔ بانڈ مارکیٹ، خاص طور پر، اقتصادی اعداد و شمار کو تیار کرنے اور مستقبل کی شرح میں کمی کے بدلتے تاثرات کے جواب میں توقعات کی بحالی کا مشاہدہ کر رہی ہے۔

Leave a Reply

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Discover more from Sports Setup

Subscribe now to keep reading and get access to the full archive.

Continue reading